گیلری نظمیات

سازندر

سے گۆو سازندر یُس سازس
اندرم شیچھ ونہِ نتہ گۆو کۆٹ
دلہ چیٚن تارن یُس رود چارن
لولاہ سۆر یمۍ نارا ژھۆٹ
یمۍ سند گیوُنا دیپک راگا
ژکھ لگہِ ژانگین ژلہِ انہِ گۆٹ
ہردہ کہ زرہ نشہِ تھوِ یُس رچھۍ رچھۍ
دمہ دمہ پننے پھۅلوُن ہۆٹ

(مس ملر 1955)

فن کس تصورس پیٹھ چھیہ یہ کاشرس منز شاید گۅڈنچ نظم۔ یہ چھیہ سن 1953 منز لیکھنہ آمژ۔


روت موکل

کۅ کتھ ہیتھ آو شبنم راتھ شامس
قدم سۆتۍ پاٹھۍ تروون پوشہ وارے
اژتھ پوشن کنن منز راتۍ راتس
اپز اۆش رود ہاراں تولہ وارے
مٹنۍ گورا ملا زن خانقیشا
ونان اوسکھ چھہ دنیا دار فانی
فریبا بۆڈ یتیک اسنا تہ عیشا
رِوانی یۆت اژن نیرن رِوانی
اتھۍ اندر آفتابن تروو پرتو
اچھن گاشا اۆنن کوسن دلن مل
عناصرہ شبنمس ڈجہ تے کٔڈن دو
فنا گۆو گاش ڈیشتھ روت موکل
ژھُنس کھنگالہ پوشو مس ملوریو
کۆرس ژرِ پۆپ شریو زن پوشہ ٹوریو

(مس ملر 1955)

سانیٹ فارمہِ منز چھیہ یہ امین کامل سنز اکھ ابتدایی نظم یۅس 1953 ہس آس پاس وننہ آمژ چھیہ.


ژہ آیکھ، مگر

ژہ آیکھ وۅنۍ مگر ہلمس لٔدتھ پوش
کنڈیو رتہ دٲوۍ ییلہ کۆر میون یاون
جدایی ہندۍ میہ ہردن رنگ تاں ڈول
وۅں کرتن ماگہ بزۍ وصلک یہ شراون
ژہ یتھ پونپر بٔنتھ گتھ کرنہِ آیکھ
سہ ژونگے ژھیۆو یہ کیا چھے شولہ ناون
یمو وشنیو وٹھو شینس مہ کر میٹھۍ
یہ گۆو وشنیر پننے راوہ راون
میہ ددۍ متۍ گاسہ تلۍ تامت زمینس
اۆبر کھٲلتھ ژہ کیا ہیکھ آبہ ناون
یہ امریتہ کھوس کُنہِ سیکلس ڈیکس لاے
سۅ تریشی پھٹ سہ جوشک سور یاون
میہ کیا وۅنۍ تلمہ کرۍ تن کانہہ نقابس
میہ ہیۆتمت پان پننے ژورِ تھاون
میہ ہۆکھ وُڈرن اندر نژۍ نژۍ رگن خون
ژیہ یژھۍ نے ڈل ہواوس چیۆن تہ چاون
میہ زن گۆو ہیرِ کھسون پوو نیرتھ
ژیہ یژھۍ نے زندگی ہند بام چھاون

(لوہ تہ پروہ 1965)


زیرو برج

یہ چھہ زیرو برج
یمہ شہرہ تہ پریتھ ہنگامہ بدون
سنسان وڈر پیٹھ آسن د‏تھ
تن تنہا، نیتھہ نۆن بیرٲگیا

استادہ سۆتھِس پیٹھ ہم قد پھرس
صفحہ گنڈتھ عیذ نماز پران
لا یلف قریش الفہم

خاموش، سفید ہوس بوٹن
پۆت زون چھیہ جامن داغ چھلان
ویتھہِ ہندین پاں آرن اندر
نپہ ناو چھیہ پہمژ چاندۍ کران

یہ چھہ زیرو برج
زیرو چھہ عجایب نقطہ مہ پرژھ
اتہِ گرند راواں، اتہِ گرند وۅپراں
یمۍ وُزہ منزہ کۆڈ نہ قدم از تاں
تس کیا چھہ لطف تمہِ آولنیک
ستہِ پورہ وچھتھ بۅن یُس چھہ یوان

وچھ دورِ ہہ بالس پیٹھ مندر
انسان چھہ ہر وزِ دلدارس
تھزرس پیٹھ شیراں سنگاسن
جے شنکر چانہِ جٹایہ دۅہے
زُنہ شبنم تارکھ پرزلاوُن

یمہ فضہہ منزۍ چھہِ دپان اکھ وتھ
کتھ تام بیہ پے شہرس نیران
کُس ژلہِ ہستی ہندِ حاطہ نیبر
کنڈۍ تارِ تھدم تھزِ ژھال تُلتھ
کس زالہِ یہ سمسارک کل، یتھ
پریتھ لنجہ چھہ ژہۍ ژنۍ دۅد نیران

ہُتھ بونہِ ہمن پنہ وتھرن منز
اچھ پیٹھ چھیہ گمژ اچھ زونہ زژن
احساس چھہ تیزاں پۆت راتک
چرچیں چھیہ ؤٹل کانہہ یام کراں

تس یارِ مشن گارس ونۍ کین
کینہہ آسیا میون تہِ خواب یوان
ییتہ ہے چھہِ یِوُن سونتس اندر
میوہ رۆس وِرِ تامت گب نیران

خاموش فضا بے تار وزاں
پریتھ چیز سۅرس سیتۍ سۅر ملوان
دل میون تہِ کیاہ تاں گنگراوان

قدرژ تہِ چھیہ فنکاری ہنز خۅے
کم نقشہ چھیہ تراواں ژھایہ، ژہ وچھ
اسۍ کیا چھہِ فقط نفشن ہندۍ رنگ
پیۆو تاپھ تہ چھتۍ چھتۍ مد مۅکلیۆو

سہ تہِ واتہِ دۅہا ییلہ ژھایہ ژھیون
یم رنگہ رنگہ سٲری نقشہ مٹن
یکسان پرگاشک نقطہ بٔنتھ
سمسارہ چہ ویتھہِ ہنگامہ بدون
پریتھ انسان بنہِ اکھ زیرو برج

(لوہ تہ پروہ 1965)


نیتھہ ننۍ معنی

زلفن چانین ہند گۆن سایہ
یتھ صحراوس میانی مایہ
پچھۍ یا ریتۍ چھیم چٲنی یاد
دلہ کس دروازس دبرایہ
وٲنس پیٹھ کمۍ دوریر یۆژھ
تمہِ پژِ ما سمسارس زایہ

واون کۆر شمعہس بلۍ گیند
نبہ کین ژانگین ؤژھ تھتھرایہ
جگرن تھاویو دادین ٹھان
کرِ کیا دل چھس بر ہمسایہ
نفرژ حسرت وٹھ کمجار
لولس نیامت اشۍ ددرایہ

سونچکۍ پیمانے گیہ تنگ
بییہ ما سنا کینہہ قٲلب درایہ
ہتہ سا بہ تہِ کٕنہ لولک سریہہ
ہتہ سا بہ تہِ چھُس تہنزی ترایہ
کمۍ دۆپ ییتہ چھیہ نہ آدمۍ بۅے
یم کیا ادہ جھا ساریۍ ژھایہ
اچھرن ہند زربف نایاب
نیتھہ ننۍ معنی گٲمتۍ ضایع

ہونس گردنہِ سۅنہ سند کۆر
رتہ چھپہِ لگیو اتھ وۅپھرایہ

یتھ ہندرس شہرس منز میون
بڈکیل دل تہِ چھہ بۆڈ سرمایہ

(لوہ تہ پروہ 1965)

کامل چھہ یہ نظم فروری 1961 چہ کاشر بزمہِ ہنزِ میٹنگہ منز پران (گلریز رپورٹ) تہ امہِ رسالہ کس فروری 1961 شمارس منز چھیہ یہ چھپان۔ میٹنگہِ منز چھہِ اتھ نظمہِ متعلق اختر محی الدین ونان زِ "اسہِ سارنے اوس یہ خیال رٔٹتھ زِ برونٹھ کن چھا لیکھنچ کانہہ وتھا کنہ نہ۔ اسہِ یا اوس شعرن ابہام گژھان نتہ ٲسۍ رومانیتس کن دوران۔ یہ نظم چھیہ رمز پیش کٔرتھ اکھ صحت مند وتھ ہاوان۔” (شاید چھہ ابہام راہی یس تہ رومانیت فراقس کن اشارہ۔) راہی چھہ اتھ "نفیس نظم” ونان تہ مقبول (بقول مظفر عازم شاید مقبول حسین جرنلسٹ یس "مزدور” اخبار کڈان اوس) چھہ ونان زِ "یہ نظم چھیہ تمہِ اکہِ نوِ ترایہ ہند دسلابہ کران یتھ اشاریت ونان چھہِ۔


یہ سیہ برونز

نم یۆتامت چھہِ سلامت انگ زخمن چھہِ سراب
قد یۆتامت چھہِ قداوار قیامت چھیہ بلن

یہ سیہ برونز یہ گژھن والہِ زمانک یمہ ہیُک
یہ سیہ برونز یہ اژن والہِ زمانچ زینہ چخ
یہ سیہ برونز چھہ تِتھے کنڈین چھہ شولاں تقدیر
پدۍ چھہِ پژراواں گُلن قمرین چھیہ لاراں زنجیر
حسن؟ افلاس تصور تہ عشق؟ جرم کبیر
اتھۍ سیہ برنزس اندر پابند حرکت ژہ تہ بہ

یہ گل اندام ستی سر یہ پشاچن ہنز کشیر
بلبلُن اول یہ شو مالین حسیں ناگہ دِوے
لل مژ روزِ نہ یجبیارِ دۅہے ٹاکین تل
نندہ ریۆش زروِ نہ زانہہ سہزہ وژارس انُومل
مون اندۍ پۆک چھہ سیہ پوش تہ موسم اجہل
چھہ جنون یۆت تاں سلامت چھہِ سلامت ژہ تہ بہ

سانہِ زے ژھایہ بنن لولہ فسانک عنوان
بس دۅیو نارہ بریہو واتہِ یہ افسانے اند

(لوہ تہ پروہ 1965)


نیلہ ناگ

راتھ بییہ میٲنس جنونس ڈۆل ہوا
ووت بییہ تتھۍ دردہ ون کِس دامنس تل ژھال دتھ
یتھ اندر قرنہ بدین ہند نیلہ ناگ
یارِ گنرس منز چھہ کتہِ تامتھ وزان

تریشہ ہتۍ درایہ بیہ سۅکھ یٲغی خیالن ہندۍ ہرن
وٹھ پھیشاں پیہم کھماں نارن وساں سنگرن کھساں
نیلہ ناگک پے کڈاں دوراں دواں
پھیرۍ پھیرتھ پیۍ ژھینتھ سپدیۍ وُداسۍ

تام پۆت کنہ واں گیم پتھ کال کُن ترٲوم نظر
عمرِ ہند کھیۆل بالہ تینتٲلس وچھم لمۍ لمۍ کھسان
بالہ تینتٲلس تتی ییتنتھ چھہ اکثر آفتاب
رٲژ سُمہِ شفقچ سِندر تراواں تہ سپداں بالہ بزۍ

اتھۍ اندر برونہہ کنہِ میہ کھرش ہیو گۆو قدم ٹھکہ رٲوم
کنڈۍ دۅپھس اندر وچھم ٲوج تہ زٲوج ٲلۍ ہن
ٹھولہ جوریاہ نیج نیج
بے صدا پچ پچ کراں آلو دواں وشنس پھہس
اکھ رژھا اُکنے دُکلہِ گٲمژ حسیں ون ژٔر بہت
منزۍ دواں فضہس اندر کس تام بے تابانہ ؤنۍ
پیش کالچ کل بدس کالکۍ ستم
زندگی ہنز تریش نلہ ناگک امار
مارۍ مٔنز دیوانگ
دور کتہِ تامت گجرۍ ڈوکس اندر اکھ ژانگۍ ریہہ
بڈکہِ ماراں منزۍ ژھیواں منزۍ شولان
حٲدثن ہاپتھ پنجن کمۍ کٲسۍ متۍ ازتاں چھہِ نم
سۅیتہِ اتھ ژٲنگس اگر شرۍ پاٹھۍ کانہہ مژراوِ ور
تیلہ پھیرۍ اشۍ قطرہ ہی کٔژتام پیڈن زورِ پیٹھ
ژونگ ژھیوِ راوِ گجر ڈوکک وجود
گل چھنتھ پییہ روزِ بس کنڈۍ دار شاخ
دردہ ون کس آسمانس پییہ نہ کانہہ کریہنیارہ داغ
تارکا کُنہِ اندہ کانہہ ہے پھٹ تہ پھٹ
نیلہ ناگہ چہ تریشہ کانہہ ہے پیۆو تہ پیۆو

نیلہ ناگ
چیانہ اچھ چیانین اچھر والن ہندس سایس تل
اۆبرہ لنگس منز چھہ زوتاں شامہ تارکھ لوبہ ون
نیلہ ناگ
زاو ییتہ اولم صبح ظلمات ڈۆل
شعر گۅڈنیک آدمس سپدیو عطا
عیسی ہس درایہ صلیبچ باجہ کنڈۍ تاجچ برات
نجدہ ون اکہ رمزہ گۆو گلنار
وسۍ پیۆو بے ستون
نیلہ ناگے کایناتکہ دٲیرک مرکز تہ گۆو
نیلہ ناگے زندگی ہندین دۅکھن ابدی سرور
ہاوسن ہند انتہا
نیلہ ناگس تام واتن بٔڈ کتھا

(لوہ تہ پروہ 1965)


پرینۍ شاہراہ

دور اکھ زیٹھ، سرد، پرینۍ شاہراہ
بے صدا، پرسکون، پراسرار
زاگہ سۅندر، حسین، ماگچ راتھ

زیٹھ زن شراونس اندر دگرس
آسماں قد سفید پھرستچ ژھاے
سرد زن شامہ پتۍ بہت تنہا
یاونس پیر مرد کانہہ دیہِ ناد

کاروانن یہ وتھ اژھینۍ تہ بیہ خواب
نندرِ ہۆت پیالہ دتھ چھیہ بۆمبراواں
واد ہاناں چھہِ ماگہ ژھٹھ ڈیشتھ
ناد پھیراں چھہِ پۆت، بیہ پے، بے تاب

وچھ ژپاسےوساں چھہِ کیا شنہ تھۆسۍ
بے صدا، پرسکون، پراسرار
زنتہ وٹھ گومناوۍ دلدارن
اچھہِ پوشن ژۅپارۍ لج ببراے
یم مگر گامہ سۅندرہ از یژکالۍ
جامہ چھتۍ لاگۍ لاگۍ مٲلس درایہ
کارتکۍ زونہِ زن چھیہ لجمژ دونۍ
نور پارن ژۅپارۍ لۆگ چھکراو

قدرتک پرون کم زباں موسی
ید بیضا چھہ یُتھ تہِ وقتک ہیتھ
ید بیضا کمال اظہارک
ورگہ احساں چھہِ سامری کلمار
داغ بییہ ہن پرینس چھہ پرزلاوان
اۆبرہ نیراں چھہ یُتھ چھلتھ افتاب

نظرِ یس کٲنسہِ گیہ سۅ مٔژ ہیہ تن
فرقتک داغ تس گلالن رۆٹ
فرقتک داغ گۆژھ یہ رژھراوُن
ریہہ یہ سینس اندر تہ گٔژھ زیورنۍ
سینہ ہے نارہ دزِ تہ کیا پرواے

چھونپھ دتھ قلزمس نِیِن کُس کیا
نیلہ کنٹھس چھہ زہرہ نۆٹ بۆڈ لاس
زہرہ مس زیچھرس چھہ ژھۆٹراواں
تٍرِ منز سرد بیٚب چھہ وشناواں
تیز تلوارِ پیٹھ چھہِ زن متۍ کھۅر
سونتہ سبزارہ منزۍ قدم تراواں
پان باساں چھہ لۆت لطیف لطیف
فان سپداں چھہ پریتھ کثیف کثیف
تن تنہا، بیہ سنگ، بے قندیل
رہ مسافر چھہِ ادہ ہیواں پراونۍ
دور اکھ زیٹھ، سرد، پرینۍ شاہراہ

شاہراہ یتھ نہ میلہ پٹ نہ سراے
وقت خاموش، بے پگہ، بے از
کانہہ گلابک وتھر نہ کانہہ کنڈۍ پیۆت
نہ ٹینڈین دگ نہ منز اتھس خۅشبوے
کانہہ تہِ ٹٹہ وہر، کُنہِ تہ پکھہِ ہند واش
بند فضہس دوان چھہ نہ أڈ گراے
ظاہرچ تیہہ نہ باطنچ نرمی
آب باقی نہ کانہہ سرابک خواب
بس چھہ اکھ کینہہ نہ، کینہہ نہ، کینہہ نہ، کہنۍ

(لوہ تہ پروہ 1965)


جنگل

زال وہرتھ چھہ دور تاں جنگل
چشمہ لوسم وچھاں وچھاں جنگل
پاد تاں لوسۍ شوق تاں پرانیۍ
دم بدم تازہ دم جواں جنگل
پننہ ازلک تہِ باخبر عٲرف
میانہِ ازلک تہِ رازداں جنگل
نٲیلن ہندۍ صدم قدم بقدم
گٲیلن منز نواں بڑاں جنگل
عظمتک بے مثال اکھ تاریخ
پانہ کلہن تہ داستاں جنگل
کُس چھہ وٲصل تہ کس سپد محرم
کینہہ چھہ پوشیدہ کینہہ عیاں جنگل

پانۍ پانے کڈاں چھہ واوس کل
پانۍ پانے الان ڈلاں جنگل
کریڈہ زالن تہِ لولہ کانچھاں آے
ہرنہ کھاون تہِ پھانپھلاں جنگل
کلۍ دۅپھن ہند تہِ بے پناہ غمخوار
رٲیلن ہند تہِ باسباں جنگل
سونتہ کالس تہِ نالہ متۍ سوزاں
ماگہ ششرس تہِ یژھ براں جنگل
کتجہ آلین تہِ لولہ داراں شاخ
حادثاتن تہِ لے کراں جنگل

ککلہ بولاں چھیہ یارہ سند گفتار
وچھ یہ بے ذوق بے زباں جنگل
یام نیراں چھہ سریہِ ہیتھ زژہ مۅٹھ
تام ژونین چھہ ٹھرۍ تھواں جنگل
یام پوٹھاں چھہ کانہہ مژھیل ارماں
تام لاگاں چھہ امتحاں جنگل
یام میلاں چھہ دۅن دلن سودا
پھاس تراواں چھہ درمیاں جنگل
بال کٲتیا ژٹاں چھہِ متۍ ہاوس
لال کٲتیا چھہ راوراں جنگل

یوت ظالم تہ یوت بے مروت
یوت ٲستھ تہِ خۅش کراں جنگل
شانہ وۅگناں وچھتھ امیک سبزار
پرانہ ویسراں اگر چھناں جنگل

(لوہ تہ پروہ 1965)


 بے وق

زٔر تہ کٔج خاموش راتھ
ٹھس ٹھس ٹھس
کتھ نہ باتھ
ترین برنزین ہند بے صبر اکھ انتظار
"ییژ مستی؟”
تڑ — تڑاخ
"کُس سا چھو —؟”
"سے یمس یۆدوے ژیتس آسی زمانا اکھ سپد
ناد بوزتھ واد ہیو اندرے کریوتھ
یاونچ تیہہ ییلہ ہمی، ییلہ زانۍ ہندس خلوکھس اندر اژکھ
زان بوزکھ، زان ڈیشکھ، زانہ بے زان بنکھ”
کتھ نہ باتھ
ٹھس ٹھس ٹھس
تڑ — تڑاخ
زٔر تہ کٔج خاموش راتھ

(لوہ تہ پروہ 1965)


شام تا صبح

گاشس گیہ ترہ پچہ جامن
یٲغی ژھایو کۆرہس جۆٹ
شامس اکھ اکھ انگ ویگلیوو
برگس برگس عیرق پھۆٹ
صرژن ہندۍ تارکھ پرزلیۍ
معنہِ مسافیرن انہِ گۆٹ

لذژ ہندس بند کمرس
وٲراگن پھٹروو برہ پۆٹ
تھرسہ تھرسہ پرانین دیوارن
صدۍ ین ہند وسۍ پیۆو نلہ وۆٹ
شنیاہن تامت پھٹۍ کنڈۍ
دنیا جنیاتو تل رۆٹ
لیدریمژ ژمٹھیمژ وتھ
قدمن کانچھ تہ منز کھۆٹ

تارو پیٹھہ گیہ ژانگین کٕھر
پننی ژھایتۍ چورکھ ہۆٹ
پھم مالن لٔج گاشچ ہانژھ
افتابس گۆو آنگن ژھۆٹ

رنگس رنگس گیہ ملون
تصویرن ہند نۆو اندرۆٹ

یارہ بلن کھۆت آبک گٕتھ
ییراں ییراں اکھ اکھ نۆٹ

(بییہ سے پان، 1967)


سرسٲے شہر

یہ چھہ بے پژھ اکھ سرسٲے شہر
وتہِ وتھ چھیہ ٹکاں وتہِ وتھ چھیہ برکاں
پریاگہ چہ وتہِ ہے شنکھ وایکھ
اند وٲتتھ ڈیشکھ کابک بُتھ
اسمانہ کہ ہاوسہ وُپھ تراوکھ
اچھ مژراوکھ پاتالس منز

ژہہِ ژہہِ چھہِ نشانن وِہ بدلان
پریتھ چیز چھہ رنگن ہنز سۅنزل
خوابن تہِ چھہِ خوابے آنپہ دوان
وتہ ڈانبس پیٹھ وتہ گتھ: نِشہ بدۍ

پژھہِ دار اگر کانہہ وتھ ژہ لبکھ
صبحہ شام پکاں سۅ تہِ واتی اند
یمہ شہرہ گژھتھ یتھۍ شہرس تاں

(بییہ سے پان، 1967)


نوش لب

پھل ژندر زونہِ وٹھن
کتھ تام کتھہِ پیٹھ پھۆل اسُن
آدنچ معصوم لغزش
یاونک رنگین گناہ
بیقلس شۆدرس گماں گۆو
میانۍ عشقن کار کۆر
پان سۅمبرتھ ژھال آکاشس تجُن
کٲژا تہ کیا
زونہِ وچھ اکھ آبہ ملرا
درایہ پانس پننہِ لوسن شایہ
خلوکھ جایہ کُن
کتھہ گٔرس وقتس چھتیہ بمہ تاں
گیواں منز شہرہ گامن
چایہ دامن
پیٹھ
"عجب ملکس دلس سنۍ نوش لب”

(پدس پود ژھاے، 1972)

یہ نظم چھیہ 1969 منز وننہ آمژ۔


3 تبصرے

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s